Yeh Jo Deewane Se Do Char Nazar Aate Hain ||| Saghar Siddiqui Ghazal

 

Yeh Jo Deewane Se Do Char Nazar Aate Hain
Saghar Siddiqui Ghazal

یہ جو دیوانے سے دو چار نظر آتے ہیں 
ان میں کچھ صاحبِ اسرار نظر آتے ہیں 

تیری محفل کا بھرم رکھتے ہیں سو جاتے ہیں 
ورنہ یہ لوگ تو بیدار نظر آتے ہیں 

دور تک کوئی ستارہ ہے نہ کوئی جگنو 
مرگِ امید کے آثار نظر آتے ہیں 

حشر میں کون گواہی میری دے گا ساغرؔ
سب تمہارے ہی طرف دار نظر آتے ہیں 
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
Yeah Jo Deewane Se Do Char Nazar Ate Hain
Un Ma Kuch Sahib e Israr Nazar Ate Hain

Teri Mehfil Ka Bharm Rekhte Hain So Jate Hain
Warna Yeah Log Tu Bedaar Nazar Ate Hain

Dor Tak Koi Sitara Hai Na Koi Jugno
Marg e Umeed Ke Aasaar Nazar Ate Hain

Hashar Ma Kon Gawahi Meri De Ga Saghar 
Sub Tumhare Hi Talab Gar Nazar Ate Hain
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
Thanks For Your Love & Support